Thursday, 15 February 2018

شہید سپاہی قمر مسیح گل کو ہم سے بچھڑے ایک سال بیت گیا

بہاولپور( رپورٹ؛ شکیل انجم ساون) شہید سپاہی قمر مسیح گل کو ہم سے بچھڑے ایک سال بیت گیا وہ گزشتہ برس پاک فوج میں اپنی خدمات سر انجام دیتے ہوئے 16فروری کو حالق حقیقی سے جاملے۔قمر مسیح ایک غریب گھرانے میں پیدا ہوئے اور تعلیم کے لیے بہاولپور آگئے ابتدائی تعلیم کانونٹ سکول بہاولپور سے حاصل کی اور ایف اے ، ایس ای کالج بہاولپور سے کیا اور 24دسمبر 2002کو پاک آرمی کو جوائن کیا۔ آپ نے پاک آرمی میں کھیلوں کے شعبے میں رہتے ہوئے مختلف میڈلز حاصل کیے اور پھر رسالپور میں کھلاڑیوں کی تربیت کرنے لگے.
 یہ بھی پڑھیں؛ صوبائی وزیرانسانی حقوق و اقلیتی امور خلیل طاہر سندھو کی زیادتی کا شکار مسیحی لڑکی سے ملاقات
 اسی دوران اپنے خالق حقیقی سے جاملے انہیں فوجی اعزاز کے ساتھ دفنایا گیاان کے دو بیٹے اور ایک بیٹی ہے ۔ مسیحی قوم کو اپنے اس سپوت پر فخر ہے۔


مکمل تحریر >>

صوبائی وزیر انسانی حقوق خلیل طاہر سندھو کی زیادتی کا شکار صبا ساجد سے ملاقات

گجرات (رپورٹ: ڈاکٹر عظمی کنول چوہان؛ ڈویژنل کوآرڈینیٹر لاہور) صوبائی وزیر برائے انسانی حقوق و اقلیتی امورخلیل طاہر سندھو کی زیادتی کا شکار صبا ساجد اور اس کی والدہ سے ملاقات ۔ وہ زیادتی کا شکار صبا بیٹی کے متعلق نوائے مسیحی پر خبر چلنے کے بعدمظلوم ماں اور بیٹی کو انصاف کے حصول میں مدد کے لیے خصوصی طور پر گجرات تشریف لائے تھے۔ انہوں نے زیادتی کا شکار صبا اور اس کی ماں کو انصاف کی فراہمی کا یقین دلایا اور گجرات کے ڈی پی او سے ملاقات کر کے کیس پر پیشرفت کے متعلق معلومات حاصل کیں۔ اس موقع پر اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ بیٹی کے لیے قانونی جنگ لڑیں گے مجرموں کو عدالت کے کٹہرے میں لاکر کیفر کردار تک پہنچائیں گے وزیر اعلیٰ صاحب نے کیس کے معاملے میں اپنے پورے تعاون کا یقین دلایا ہے۔ صوبائی وزیر نے پاکستان مسیحی اتحاد کی صبا زیادتی کیس میں آواز بلند کرنے پر تعریف کی اور کہا کہ پاکستان مسیحی اتحاد نے ہمیشہ مظلوم کے حق میں آواز اُٹھائی ہے ۔
یہ بھی پڑھیں؛ گجرات میں مسیحی بیٹی کے ساتھ زیادتی کے واقعہ کی مذمت کرتے ہیں؛ پاکستان مسیحی اتحاد
 یاد رہے بولنے اور سننے کی قوت سے محروم صبا ساجد ولد ساجد مسیح کو دو نوجوانوں نے گھر میں گھس کر زیادتی کا نشانہ بنایا تھا اور ایف

آئی آر اور میڈیکل رپورٹ کے باوجود ملزمان آزاد ہیں۔
مکمل تحریر >>

Monday, 12 February 2018

مسیحی بیٹی کیساتھ ہونے والی جنسی زیادتی کی پرزور مذمت کرتے ہیں۔سیاسی و سماجی مسیحی قائدین

گجرات (رپورٹ :روحیل ظفر شاہی)گجرات کے علاقہ جٹووکل میں مسیحی 17 سالہ صبا ساجد کے ساتھ ہونے والی جنسی

درندگی پر غصے کی لہر برقرار۔اس واقعہ پر چیرمین پاکستان مسیحی اتحاد عمانوایل اطہر جولیس، وائس چیئرمین ڈاکٹر عظیم کنول چوہان اور سینیئر نائب صدر پنجاب و اقلیتی کونسلر ظفر اقبال شاہی نے بھرپور مذمت کی ان کا کہنا تھا کہ ہم اس متاثرہ خاندان کی ہر ممکن مدد کرنے کو تیار ہیں اور نامزد ملزمان کو رہا کرنے پر بھی تفتیشی افسر کے خلاف قانونی کاروائی کی جائے۔پاکستان مینارٹی رائٹس کمیشن کے چیرمین خان جنید ثاقب کا کہنا تھا کہ اس درندہ صفت انسان کو ہر طرح سے انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے اگر ہماری اس مسیحی بیٹی کو انصاف نہ ملا تو ہم ملک گیر احتجاج کریں گے
یہ بھی پڑھیں ؛ مسیحی معذور صبا کے ساتھ جنسی زیادتی ، مظلوم ماں کی انصاف کے لیے دہائی 
۔یاد رہے کہ کچھ روز قبل صبا ساجد جو قوت سماعت اور بولنے سے محروم ہے۔ کو جنسی درندگی کا نشانہ بنایا گیا اور واقعہ کا اندارج تھانہ سول لائن گجرات میں کروایا گیا ہے۔میڈیکل رپورٹ آنے کے بعد اسکی تصدیق بھی ہو چکی ہے۔


مکمل تحریر >>

Sunday, 11 February 2018

یتیم بچوں کو یونیفارم و سٹیشنری مہیا کرنے پر رابن یامین سہوترا کا شکریہ

لاہور(نوائے مسیحی ) یتیم بچوں کے لیے یونیفارم، کتابیںاور شوز مہیا کرنے کے ساتھ ساتھ معذور بچوں کےلئے ویل چیل
فراہم کرنے پر شالوم ٹوڈے منسٹری کی طرف سے ایڈیشنل ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن ایف آئی اے روبن یامین سہوترا کاشکریہ ادا کیا گیا ۔ اس موقع پر منسٹری کے سربراہ موسی ٰ جولیس نے کہا کہ انسانیت کے لیے نرم گوشہ رکھنا ہی روبن یامین سہوترا صاحب کی کامیابی کا راز ہے جہنیں خدا نے اعلیٰ مقام عطا کیا اور وہ مخلوقِ خدا کے لیے محبت اور ہمدردی کا جذبہ رکھتے ہیں۔
یہ بھی پڑھیں؛ پہلے مسیحی آن لائن انفارمیشن اینڈ نیوز چینل کا آغاز کر دیا گیا
انہوں نے روبن یامین سہوترا صاحب کو ایس ایس پی ریلوے سے ایڈیشنل ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن ایف آئی اے مقرر ہونے پر مبارکباد پیش کی اور ان کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کیا

مکمل تحریر >>

انسانی حقوق کی علمبردار عاصمہ جہانگیر کی وفات پر مسیحی حلقوں کا اظہار افسوس

لاہور ( نوائے مسیحی نیوز ) معروف قانون دان اور انسانی حقوق کی علمبردار عاصمہ جہانگیر انتقال کر گئیں۔ آج صبح ان
کی طبعیت اچانک خراب ہونے کے بعد انہیں ہسپتال لے جایا گیا جہاں وہ انتقال کر گئیں۔ خاندانی ذرائع کے مطابق عاصمہ جہانگیر کی نماز جنازہ 13 فروری کو ادا کی جائے گی اور تدفین لندن میں مقیم بیٹی کی وطن واپسی کے بعد ہوگی۔ عاصمہ جہانگیر کی وفات پر مسیحی حلقوں نے گہرے غم و دکھ کا اظہار کیا ہے جن میں معروف سماجی ورکر دل نواز (یو۔کے)، سماجی ورکر اختر بھٹی، پی یو سی ایم کے چیئرمین زاہد نذیر بھٹی، سماجی ورکر روتھ رخسانہ، مسیحی اینکر و ایڈوکیٹ سمیرا شفیق، نوائے مسیحی چیئرمین شکیل انجم ساون، پاسٹر انور فضل چیئرمین آئزک ٹی وی سمیت مختلف مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والے مسیحی شامل ہیں۔
یہ بھی پڑھیں؛ پہلے مسیحی آن لائن انفارمیشن اینڈ نیوز چینل کا آغاز کر دیا گیا
66 سالہ عاصمہ جہانگیر 27 جنوری 1952 کو لاہور میں پیدا ہوئیں اور وہ سماجی کارکن اور انسانی حقوق کی علمبردار کے طور پر جانی جاتی تھیں۔نڈر، باہمت اور بے باک خاتون عاصمہ جہانگیر کو سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کی پہلی خاتون صدر ہونے کا اعزاز حاصل تھا اور وہ ججز بحالی تحریک میں بھی پیش پیش رہیں۔

مکمل تحریر >>